Page Nav

TRUE

Left Sidebar

False

تازہ ترین

latest

جب آپ بچے کو چلنا سکھا رہے ہوتے ہیں

جب آپ بچے کو چلنا سکھا رہے ہوتے ہیں تو اسے ایک جگہ کھڑا کر دیتے ہیں اور آپ تھوڑے سے فاصلے پر خود جا کر بیٹھ جاتے ہیں۔ بچہ اس وقت بہت ڈر ر...

جب آپ بچے کو چلنا سکھا رہے ہوتے ہیں تو اسے ایک جگہ کھڑا کر دیتے ہیں اور آپ تھوڑے سے فاصلے پر خود جا کر بیٹھ جاتے ہیں۔
بچہ اس وقت بہت ڈر رہا ہوتا ہے،
خود کو تنہا محسوس کر رہا ہوتا ہے،
پریشانی محسوس کر رہا ہوتا ہے،
وہ جلد از جلد اپ تک پہنچنے کی کوشش کرتا ہے،
اور آپ کی گود تک پہنچتے ہی آپ کی بانہوں میں سما جاتا ہے۔
اور آپ کو بھی یہ بات معلوم ہوتی ہے کہ بچے کو چلنا سکھانے کے لئے اس مرحلے سے گزارنا ضروری ہے۔
کبھی ایسا بھی ہوتا ہے کہ بچہ راستے میں ڈگمگا جاتا ہے اور گرنے کے قریب ہو جاتا ہے،
لیکن آپ کی مستقل توجہ کی وجہ سے وہ گِر نہیں پاتا بلکہ فورا آپ اسے سنبھال لیتے ہیں اور دوبارہ کھڑا کر دیتے ہیں۔
بالکل اسی طرح جب اللہ کسی بندے کو اپنا دوست بنانا چاہ رہے ہوتے ہیں تو اسے پریشانی میں مبتلا کر دیتے ہیں۔ وہ پریشان ہو کر اپنے معبودِ حقیقی کی طرف لوٹتا ہے جو کہ مستقل اسکی طرف متوجہ ہوتا ہے۔ راستے میں کئی مواقع ایسے بھی آتے ہیں جب بندہ اپنے آپ کو تنہا محسوس کر رہا ہوتا ہے، لیکن درحقیقت وہ تنہا نہیں ہوتا، بلکہ اللہ کی تربیت میں ہوتا ہے۔
بھول جایئے اس بات کو کہ آپ اللہ کی طرف بڑھنے کی کوشش میں گرنے لگیں اور اللہ آپ کو نہ سنبھالے۔ کیونکہ حدیث کے مطابق جب انسان اللہ کی طرف متوجہ ہوتا ہے اور اس کی طرف قدم بڑھاتا ہے تو اللہ اسکی طرف دوگنا متوجہ ہوتے ہیں۔


Junaid Tahir 
www.DailyTenMinutes.com

 Follow me on Twitter  View my profile on LinkedIn  Like my page on Facebook  Read my articles on my personal blog  Subscribe to my Feed  Visit my Google+ Page