Page Nav

TRUE

Left Sidebar

False

تازہ ترین

latest

قُلۡ اَعُوۡذُ بِرَبِّ الۡفَلَقِ

سورہ الفَلَق آیت نمبر 1 قُلۡ اَعُوۡذُ  بِرَبِّ الۡفَلَقِ ۙ﴿۱﴾ ترجمہ: کہو (١) کہ : میں صبح کے مالک کی پناہ مانگتا ہوں۔ تفسیر: 1: قر...


سورہ الفَلَق آیت نمبر 1
قُلۡ اَعُوۡذُ  بِرَبِّ الۡفَلَقِ ۙ﴿۱﴾
ترجمہ:
کہو (١) کہ : میں صبح کے مالک کی پناہ مانگتا ہوں۔
تفسیر:
1: قرآن کریم کی یہ آخری دوسورتیں معو ّذتین کہلاتی ہیں، یہ دونوں سورتیں اس وقت نازل ہوئی تھیں جب کچھ یہودیوں نے حضور اکرم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) پر جادو کرنے کی کوشش کی تھی، اور اس کے کچھ اثرات آپ پر ظاہر بھی ہوئے تھے، ان سورتوں میں آپ کو جادو ٹونے سے حفاظت کے لئے ان الفاظ میں اللہ تعالیٰ کی پناہ ما نگنے کی تلقین فرمائی گئی ہے، اور کئی احادیث سے ثابت ہے کہ ان سورتوں کی تلاوت اور ان سے دم کرنا جادو کے اثرات دور کرنے کے لئے بہترین عمل ہے اور حضور نبی کریم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) رات کو سونے سے پہلے ان سورتوں کی تلاوت کرکے اپنے مبارک ہاتھوں پر دم کرتے اور پھر ان ہاتھوں کو پورے جسم پر پھیر لیتے تھے۔
آسان ترجمۂ قرآن مفتی محمد تقی عثمانی
https://goo.gl/2ga2EU